اگلا صفحہ پچھلا صفحہ

"بجلی کا بحران، عوام پریشان" پر مزید کوریج

بجلی کے نرخوں میں کمی‘حکومت 40ارب کا خسارہ برداشت کرے گی‘راجہ پرویز اشرف:
اسلام آباد(اردوپوائنٹ اخبا ر تازہ ترین23نومبر2008 ) بجلی و پانی کے وفاقی وزیر راجہ پرویز اشرف نے کہا ہے کہ توانائی کا بحران سابقہ حکومت کی نااہلی ہے بجلی کی پیداواری صلاحیت بڑھا کر ممکنہ مشکلات سے نمٹنے کیلئے سابق دور میں حکمرانوں نے کچھ کیا ہوتا تو ہمیں آج مشکلات پیش نہ آتیں حالات کے پیش نظر حکومت کو بجلی کے بلوں میں مجبورا اضافہ کرنا پڑا جو عوامی مطالبے پر واپس لے لیا گیا ہے نرخوں میں کمی کے باعث چالیس ارب روپے کا خسارہ حکومت سبسڈی کی صورت میں برداشت کرے گی ٹیرف سے سب سے زیادہ عام آدمی کا خیال رکھا گیا ہے اضافہ میں اے سی استعمال کرنے والے امراء طبقہ پر بوجھ بڑھایا گیا تھا لیکن عوامی احتجاج نے فیصلہ بدل دیا جس سے سب کو فائدہ ہوا ایک پروگرام میں اپنے خیال کا اظہار کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ قیمتوں میں اضافہ واپس لیئے جانے پر اضافہ شدہ بلوں کی رقم آئندہ بلوں میں ایڈجسٹ کی جا رہی ہے اب بجلی کی قیمتیں بڑھانے کا ارادہ ترک کر دیا ہے ماضی میں پانی کے اخراج میں کمی کے باعث لوڈ شیڈنگ کا دورانیہ طویل رہا لیکن موسم کی تبدیلی اور بارشوں کے باعث پانی کے ذخائر میں اضافہ سے صورتحال بہتر ہوئی ہے انہوں نے کہا کہ نہروں کی بندش کے باعث دسمبر میں لوڈ شیڈنگ ہو سکتی ہے تاہم صارفین کو زیادہ پریشانی نہیں ہو گی حکومت توانائی کے بحران کے حل کیلئے لانگ ٹرم مڈ ٹرم اور شارٹ ٹرم بنیادوں پر عملی اقدامات کر رہی ہے ملک کے وسیع تر مفاد کیلئے ڈیمز تعمیر کئے جائیں گے سستی بجلی کیلئے کوئلے ایٹمی پانی کے منصوبوں پر عمل جاری ہے بجلی چوری کی روک تھام پری پیڈ کارڈ سسٹلم متعارف کروائیں گے-انہوں نے کہا کہ گزشتہ آٹھ برسوں میں بجلی کا ایک یونٹ بھی پیدا نہیں کیا گیا سابق صدر جنرل ریٹائرڈ پرویز مشرف نے خالی سڑک پر بھاشا ڈیم کا بورڈ لگا کر پراجیکٹ کا افتتاح کر کے قوم سے فراڈ کیا انہوں نے کہا کہ مصائب میں عوا کو بھی صبر وتحمل سے کام لینا چاہئے بحرانوں پر قابو پانے کیلئے بڑے پلازوں سی این جی سٹیشنز اور عمارتوں کو دلہن کی طرح سجانا بجلی کا ضیاع ہے صارفین کو بھی حکومت سے تعاون کرنا ہو گا-

23/11/2008 16:20:17 : وقت اشاعت
پچھلی خبر مركزی صفحہ اگلی خبر
تمام خبریں
یہ صفحہ اپنے احباب کو بھیجئیے
محفوظ کیجئے
پرنٹ کیجئے