اگلا صفحہ پچھلا صفحہ

"بجلی کا بحران، عوام پریشان" پر مزید کوریج

پشاوراورمضافاتی علاقوں سمیت صوبہ بھر میں بجلی کی غیراعلانیہ طویل لوڈشیڈنگ کادورانیہ20 گھنٹے ہو گیا:
پشاور(اردوپوائنٹ اخبا ر تازہ ترین28دسمبر2008 )صوبائی دارلحکومت پشاوراورمضافاتی علاقوں سمیت صوبہ بھر میں بجلی کی غیراعلانیہ طویل لوڈشیڈنگ کادورانیہ بیس گھنٹے تک پہنچ گیا ہے۔ غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ کے باعث کاروبارزندگی مفلوج ہورہ کرگئی ہے ۔ہندمندطبقہ ہاتھوں پہ ہاتھ دھرے بیٹھ گئے۔صوبہ بھر میں گزشتہ کئی دنوں سے غیراعلانیہ طویل لوڈشیدنگ نے لوگوں کی زندگی اجیرن کردی ہے جبکہ بجلی نہ ہونے کے باعث صنعتی کاروبار بھی خراب ہوتا جار ہا ہے ۔پشاورکے علاقوں گلبہار،نشترآباد،صدر ،اندرونی شہر،حیات آباداوریونیورسٹی ٹاؤن سمیت دیگر علاقوں میں اٹھارہ گھنٹے لوڈشیڈنگ کاسلسلہ جاری ہے جبکہ دیگر مضافاتی علاقوں میں اس سے بھی زیادہ بجلی بند کی جاتی ہے ۔غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ کے باعث شہری شدید مشکلات سے دوچارہے ،گھروں اورمسجدوں میں پانی ناپید ہورہے ہیں۔شہری علاقوں میں لوگوں کے مسائل روز بروز بڑھ رہے ہیں کیونکہ بجلی کی ساتھ ساتھ گیس کاپریشربھی کم ہوگیا ہے ۔بجلی اورگیس کی مسلسل لوڈشیڈنگ سے شہری عاجز آگئے شہریوں نے حکومت کی اس غیرذمہ دارنہ رویے پر شدید غم وغصے کااظہارکرتے ہوئے مطالبہ کیا ہے کہ اگر حکومت عوام کوسہولیات فراہم نہیں کرسکتی توبہتریہی ہوگا کہ اقتدار سے الگ ہوجائے۔شہریوں کاکہنا ہے کہ ملک میں روزبروز مہنگائی بڑھ رہی ہے بجلی اورگیس دستیاب نہیں ،روزگار ختم ہورہا ہے جبکہ امن وآمان کی صورت حال بھی ابترہے ۔شہریوں نے صوبائی اورمرکزی حکومت سے غیراعلانیہ طویل لوڈشیڈنگ سے نجات دلانے کامطالبہ کیا ہے ۔پشاورکے علاوہ صوبہ سرحدکے دیگر اضلاع مردان ،چارسدہ ،نوشہرہ، صوابی ،سوات سمیت کئی علاقوں میں 20 گھنٹے لوڈشیدنگ کاسلسلہ بدستور جاری ہے۔

28/12/2008 17:22:53 : وقت اشاعت
پچھلی خبر مركزی صفحہ اگلی خبر
تمام خبریں
یہ صفحہ اپنے احباب کو بھیجئیے
محفوظ کیجئے
پرنٹ کیجئے