اگلا صفحہ پچھلا صفحہ

"بجلی کا بحران، عوام پریشان" پر مزید کوریج

بجلی کی طلب اور رسد میں فرق بڑھ گیا‘ لوڈ شیڈنگ میں اضافہ، گرمی بڑھنے سے بجلی کی طلب پندرہ ہزار سات سو پندرہ میگاواٹ تک پہنچ گئی‘ پانچ سے چودہ گھنٹے کی لوڈ شیڈنگ مجبوراًکرنا پڑ رہی ہے‘ پیپکوحکام:
لاہور(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔22مئی۔2010ء) ملک میں بجلی کی طلب اور رسد میں فرق چار سو میگاواٹ مزید بڑھ گیا ،جس کے باعث پیپکو نے شہری علاقوں کی لوڈ شیڈنگ میں ایک گھنٹہ اور دیہات میں دو گھنٹے کا اضافہ کر دیا ہے۔لاہور میں پاکستان الیکٹرک پاور کمپنی کے حکام نے نجی ٹی وی کو بتایا کہ ملک میں گرمی بڑھنے سے بجلی کی طلب پندرہ ہزار سات سو پندرہ میگاواٹ تک پہنچ گئی ہے،جو رواں سیزن میں سب سے زیادہ ہے، اس ڈیمانڈ کے مقابلے میں پیداوار تین ہزار دو سو پینسٹھ میگاواٹ کم ہے۔ حکام کا کہنا تھا کہ گیس کی جزوی بحالی پر سوا دو سو میگاواٹ صلاحیت کے اینگرو پاور پلانٹ نے ایک سو دس میگاواٹ کی پیداوار شروع کردی ہے۔حکام کے مطابق لوڈشیڈنگ میں اضافے کے بعد شہری علاقوں میں پانچ سے نو گھنٹے اور دیہات میں چودہ گھنٹے کی لوڈ شیڈنگ کرنا پڑ رہی ہے۔ ڈیموں میں پانی کی آمد بڑھنے سے پن بجلی کی پیداوار تینتالیس سو ستاون میگاواٹ ہوگئی ہے لیکن یہ اب بھی مجموعی صلاحیت چھیاسٹھ سو میگاواٹ سے کم ہے۔ ٹرانسمیشن لائن کی خرابی کے باعث بند حب پاور کمپنی کے تین سو میگاواٹ یونٹ نے پیداوار شروع کر دی ہے۔

22/05/2010 20:41:44 : وقت اشاعت
پچھلی خبر مركزی صفحہ اگلی خبر
تمام خبریں
یہ صفحہ اپنے احباب کو بھیجئیے
محفوظ کیجئے
پرنٹ کیجئے