اگلا صفحہ پچھلا صفحہ

"بجلی کا بحران، عوام پریشان" پر مزید کوریج

بجلی کا شارٹ فال چار ہزار میگا واٹ ہو گیا، طویل لوڈشیڈنگ جاری:
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین ۔28 اپریل ۔2010ء) ملک میں بجلی کا شارٹ فال چار ہزار میگاواٹ ہوگیا ہے جس کے باعث بڑے شہروں میں آٹھ اور چھوٹے شہروں اور دیہات میں سولہ گھنٹے کی لوڈشیڈنگ کی جارہی ہے۔قومی توانائی بچت پالیسی کے برعکس پشاور کے پوش علاقے میں اسٹریٹس لائٹس دن کو روشن رہیں۔ قومی توانائی بچت پالیسی کے تحت گزشتہ روز پنجاب اور خیبرپختونخواہ میں سی این جی اسٹیشنز بند کرکے گیس پاور جنریشن پلانٹ کو فراہم کی گئی۔ مگر اس کا کوئی خاطرخواہ فائدہ عوام کو نہیں پہنچا اور لوڈشیڈنگ میں کمی نہیں کی گئی۔ لوڈشیڈنگ سے مختلف شہروں میں پانی کی قلت پیداہوگئی ہے جس پر صارفین کے احتجاج کا سلسلہ جاری ہے۔ کراچی اور اندرون سندھ انٹرمیڈیٹ کے امتحانات جاری ہیں۔ بجلی غائب ہونے سے طلباء کو امتحانات کی تیاری اور سخت گرمی میں پیپر کے دوران مشکلات پیش آئیں۔ ادھر پشاور میں کنٹونمنٹ کے علاقے میں اسٹریٹس لائٹس دن میں جلتی رہیں اور واپڈا دفتر یہاں سے کچھ فاصلے پر ہے۔ دوسری جانب کوئٹہ میں مختلف اوقات میں آٹھ گھنٹے، صوبے کے ضلعی ہیڈ کوارٹر ز میں چودہ گھنٹے جبکہ دیہی علاقوں میں بیس بیس گھنٹوں کی لوڈشیڈنگ کی جارہی ہے۔

28/04/2010 17:11:10 : وقت اشاعت
پچھلی خبر مركزی صفحہ اگلی خبر
تمام خبریں
یہ صفحہ اپنے احباب کو بھیجئیے
محفوظ کیجئے
پرنٹ کیجئے