اگلا صفحہ پچھلا صفحہ

"بجلی کا بحران، عوام پریشان" پر مزید کوریج

ملک بھر میں بجلی کا شاٹ فال 5500 میگاواٹ سے تجاوز کر گیا، عوام پریشان:
لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین ۔18اپریل۔2010ء) پیپکو کے تمام تردعوے دھرے کے دھرے رہ گئے ۔ پندرہ اپریل کے بعد بجلی کی صورتحال بہتر ہونے کے بجائے مزید خراب ہوگئی ہے ۔ پیپکونے دعوی کیا تھا کہ پندرہ اپریل کے بعد لوڈشیڈنگ میں کمی آجائیگی۔ ملک بھرمیں بجلی کا شاٹ فال پانچ ہزار پانچ سو میگاواٹ سے تجاوزکرگیا ہے ۔ گرمی میں اضافے کے ساتھ ہی بجلی کی طلب میں اضافہ ہورہا ہے جبکہ پیداوار میں اضافہ نہیں ہوا ہے ۔ بجلی کی پیداوار نہ بڑھنے کی وجہ سالانہ مرمت کےلئے بند کئے گئے تھرمل یونٹ کا فعال نہ ہونا ہے ۔ بند تھرمل یونٹس نے اکتیس مارچ سے پیداوار شروع کرنی تھی لیکن ایسانہ ہوسکا۔ بجلی کی طلب پندرہ ہزار پانچ سو میگاواٹ اور پیداوار دس ہزار میگاواٹ ہے ۔ جسکی وجہ سے بڑے شہروں میں بارہ گھنٹے جبکہ پنجاب کے چھوٹے شہروں اوردیہات میں لوڈشیڈنگ کا دورانیہ بیس گھنٹے تک پہنچ گیاہے ۔ بجلی کی غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ کے خلاف عوام سراپا احتجاج بن گئے ہیں جبکہ کاروباری زندگی مفلوج ہو کر رہ گئی ہے ۔

18/04/2010 11:50:46 : وقت اشاعت
پچھلی خبر مركزی صفحہ اگلی خبر
تمام خبریں
یہ صفحہ اپنے احباب کو بھیجئیے
محفوظ کیجئے
پرنٹ کیجئے