اگلا صفحہ پچھلا صفحہ

"بجلی کا بحران، عوام پریشان" پر مزید کوریج

راولاکوٹ میں جاری پہیہ جام اور شٹرڈاؤن ہڑتال کا ڈراپ سین، لوڈشیڈنگ نہ ہونے ، پولیس فائرنگ سے زخمی افراد کو دو لاکھ فی کس کی امداد کا ا علان:
راولاکوٹ (اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین ۔یکم ۔ اپریل ۔ 2010ء) راولاکوٹ میں جاری پہیہ جام اور شٹرڈاؤن ہڑتال کا ڈراپ سین‘ لوڈشیڈنگ نہ ہونے ‘ پولیس فائرنگ سے زخمی افراد کو دو لاکھ فی کس کی امداد اور مظاہرین پر فائرنگ کی ایف آئی آر درج ہونے کی یقین دہانی پر انجمن تاجران‘ بزنس فورم‘ ٹرانسپورٹ یونین نے احتجاج ختم کردیا۔ تفصیلات کے مطابق آزادکشمیر کو بجلی کی لوڈشیڈنگ سے مستثنیٰ قرار دلانے والے پرامن مظاہرے پر پولیس کی فائرنگ جموں کشمیر لبریشن فرنٹ کے رہنما سردار عبدالحمید سمیت سات افراد کے زخمی کئے جانے کے ردعمل میں جاری پہیہ جام اور شٹرڈاؤن ہڑتال کا پانچ روز بعد اختتام ہو گیا۔ وزیراعظم آزادکشمیر کے نمائندے ایس ایس پی کوٹلی نثار خان سے پندرہ گھنٹے تک جاری رہنے والے مذاکرات کے بعد طے پایا کہ راولاکوٹ میں آئندہ لوڈشیڈنگ نہیں ہوگی۔ 27 مارچ کے مظاہرے پر فائرنگ کے دوران زخمی ہونے والوں کو دو لاکھ فی کس کی امداد اور فائرنگ کے ذمہ داران کے خلاف ایف آئی آر درج کی جائے گی جس کے بعد ہڑتال ختم ہوگئی۔ جمعرات کو کاروبار زندگی دوبارہ چل پڑا رونقیں لوٹ آئیں تعلیمی ادارے کھل گئے۔

01/04/2010 13:57:30 : وقت اشاعت
پچھلی خبر مركزی صفحہ اگلی خبر
تمام خبریں
یہ صفحہ اپنے احباب کو بھیجئیے
محفوظ کیجئے
پرنٹ کیجئے