اگلا صفحہ پچھلا صفحہ

"بجلی کا بحران، عوام پریشان" پر مزید کوریج

بجلی کا شارٹ فال 3 ہزار میگا واٹ ہو گیا، لوڈ شیڈنگ میں اضافے کا خدشہ:
لاہور،پشاور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین ۔25ستمبر۔2009ء) ملک میں غیر متوقع طورپر گرمی بڑھنے سے بجلی کا بحران دوبارہ سر اٹھا رہا ہے 3 ہزار میگاواٹ کا شارٹ فال برقرار رہے اور 4سے 6 گھنٹے کی اعلانیہ لوڈشیڈنگ ہو رہی ہے ۔ جبکہ صوبہ سرحد میں 525میگاواٹ بجلی کی کمی سے دوبارہ لوڈشیڈنگ شروع ہوگئی ۔پیپکو حکام کے مطابق گرمی بڑھنے سے بجلی کی مانگ میں اضافہ ہو گیا ہے خاص طور پر ائرکنڈیشنر چلنے سے شارٹ فال 3 ہزار میگاواٹ سے بڑھ گیا ہے اگریہ صورتحال برقرار رہی تو لوڈ شیڈنگ میں اضافہ بھی ہو سکتا ہے۔ پیپکو حکام نے بتایا کہ بجلی کی ڈیمانڈ16 ہزار میگاواٹ جبکہ پیداوار 13 ہزار میگاواٹ کے قریب ہے ۔ بجلی کی کمی پوری کرنے کے لیے شہروں میں 4 اوردیہات میں 6 گھنٹے لوڈشیڈنگ کا نیا شیڈول جاری کر دیا گیا ہے۔پیپکو حکام نے کہا کہ انڈسٹڑی کے لئے بھی 4 سے 6 گھنٹے لوڈشیڈنگ کا شیڈول رکھا گیا ہے جبکہ کراچی کو آج بھی 700 میگاواٹ بجلی فراہم کی گئی ادھرپشاور سمیت سرحد کے بیشتر اضلاع میں بجلی کی لوڈشیڈنگ کا سلسلہ دوبارہ شروع ہو گیا جس سے عوام کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔پشاور کے علاقے گنج،یکہ توت، گلہبار، فقیر آباد،نوتھیہ، حاجی کیمپ اور صدر میں بجلی کی لوڈ شیڈنگ کا سلسلہ جاری ہے ۔شہری علاقوں میں لوڈ شیڈنگ کا دورانیہ3 گھنٹے اور دیہی علاقوں میں 5 سے6 گھنٹے مقرر کیا گیا ہے۔ لوڈ شیڈنگ کے باعث شہریوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ پیسکو ترجمان کے مطابق صوبہ سرحدکو 525 میگاواٹ بجلی کی کمی کاسامنا ہے جس کی وجہ سے لوڈ شیڈنگ کی جاری ہے۔ پیسکو ترجمان نے صارفین سے اپیل کی ہے کہ شام5 سے رات11 بجے تک بجلی کا استعمال کم کریں تاکہ بجلی کے بحران پر قابو پایا جا سکے۔

25/09/2009 17:10:15 : وقت اشاعت
پچھلی خبر مركزی صفحہ اگلی خبر
تمام خبریں
یہ صفحہ اپنے احباب کو بھیجئیے
محفوظ کیجئے
پرنٹ کیجئے