اگلا صفحہ پچھلا صفحہ

"بجلی کا بحران، عوام پریشان" پر مزید کوریج

موسم گرما میں گھڑیاں آگے کرنیسمیت دیگر ذرائع سے1000 میگا واٹ بجلی کی بچت ہوئی،راجہ پرویز اشرف:
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔4 نومبر ۔2009ء) وفاقی وزیر پانی وبجلی راجہ پرویز اشرف نے قومی اسمبلی کو بتایا ہے کہ حکومت نے موسم گرما میں سورج کی روشنی سے فائدہ اٹھانے کیلئے گھڑیاں آگے کرنے سمیت دیگر ذرائع سے 1000 میگا واٹ بجلی کی بچت کی، وقفہ سوالات کے دوران ارکان کے سوالوں کے جواب میں راجہ پرویز اشرف نے بتایا کہ توانائی کے مسائل میں بجلی چوری کا مسئلہ سب سے بڑا مسئلہ ہے، بجلی کے چھوٹے چور جو کنڈا کے ذریعے بجلی چوری کرتے ہیں گزشتہ نو ماہ میں 916180 بجلی چوری کے کیسز سامنے آئے ہیں ۔ حکومت بجلی چوری کے نظام پر کنٹرول کرنے کیلئے حکمت عملی مرتب کرچکی ہے، جس پر عملدرآمد کیا جارہا ہے اور امید کی جاسکتی ہے کہ حکومت بہت جلد ان خرابیوں پر قابو پالے گی، انہوں نے کہا کہ حکومت اس وقت 3500 گھرانوں کو سولر انرجی کے ذریعے بھی فراہمی کے منصوبے پر کام جاری ہے، سولرانرجی چونکہ نئی متعارف کردہ ٹیکنالوجی ہے اس لئے یہ فی الوقت ایک مہنگا ذریعہ ہے ، لیکن وقت کیساتھ ساتھ ہم اس سے بہتر طریقوں سے مستفید ہوسکتے ہیں ، وفاقی وزیر پانی وبجلی نے ایک رکن اسمبلی کے سوال کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ اس وقت دو کمپنیاں بارہ ، بارہ میگا واٹ کے پراجیکٹ پر کام شروع کرچکی ہیں ، جبکہ سولر انرجی کے ذریعے ایگریکلچر ٹیوب ویلوں کو چلانے کے پائلٹ پراجیکٹ پر بھی کام شروع ہے جو ڈیڑھ سال میں مکمل کرلیا جائیگا ۔

04/11/2009 18:27:25 : وقت اشاعت
پچھلی خبر مركزی صفحہ اگلی خبر
تمام خبریں
یہ صفحہ اپنے احباب کو بھیجئیے
محفوظ کیجئے
پرنٹ کیجئے