اگلا صفحہ پچھلا صفحہ

"بجلی کا بحران، عوام پریشان" پر مزید کوریج

پشاورسمیت صوبہ بھر میں بجلی اورگیس کی غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ کاسلسلہ بدستور جاری:
پشاور(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین ۔12جنوری۔ 2010ء)ملک بھر کی طرح پشاورسمیت صوبہ بھر میں بجلی اورگیس کی غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ کاسلسلہ بدستور جاری ہے۔شہری علاقوں میں 8سے 10 جبکہ دیہات میں چودہ گھنٹے بجلی بند کی جاتی ہے جس کے باعث صارفین شدید مشکلات سے دوچارہیں۔پشاورکے علاقوں گنج،بشترآباد،گلبہار،صدر،نوتھیہ ،گلبرگ،یونیورسٹی ٹاؤن اورحیات آباد سمیت دیگر علاقوں میں بجلی کی ناروالوڈشیڈنگ شدیداختیارکرگیا ہے ۔پیسکوکی جانب سے جاری کردہ شیڈول کے برعکس کئی کئی گھنٹے بجلی بند کی جاتی ہے ۔بجلی کی غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ کے باعث کاورباری طبقہ اورگھریلوں صارفین شدید پریشانی کے شکار ہوگئے ہیں ۔گھروں اورمسجدوں میں پانی میسر نہیں جبکہ بجلی نہ ہونے کیوجہ سے طلباء کاقیمتی وقت بھی ضائع ہورہا ہے ۔بجلی کے ساتھ ساتھ شہر کے بیشترعلاقوں میں گیس بھی غائب ہوگیا ہے گیس لوڈشیڈنگ کے باعث طلباء اورسرکاری ملازمین ناشتہ کئے بغیر گھروں سے نکلنے پر مجبورہیں۔شہریوں نے بجلی اورگیس کی غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ پر شدید غم وغصے کااظہارکرتے ہوئے کہاہے کہ حکومت کی جانب سے ہرماہ بجلی کے نرخوں میں اضافہ کیاجاتا ہے تاہم اضافے کے ساتھ بجلی بھی غائب رہتی ہے جوانتہائی افسوسناک ہے ۔انہوں نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ بجلی اورگیس کے نرخوں میں مزید اضافہ نہ کیاجائے کیونکہ سرحد پہلے سے دہشت گردی کی لپیٹ میں ہے اورتمام ترکاروبار تباہ ہوکررہ گیا ہے جبکہ اب بجلی لوڈشیڈنگ سے حالات مزید خراب ہوتے جارہے ہیں انہوں نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ بجلی اورگیس کی غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ کاجلدازجلد خاتمہ کیاجائے بصورت دیگراحتجاج پر مجبورہوجائیں گے۔ چارسدہ ،مردان ،نوشہرہ،تخت بھائی ،ملاکنڈ،خیبرایجنسی سمیت دیگرعلاقوں میں بجلی کی غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ کاسلسلہ جاری ہے۔

12/01/2010 16:41:44 : وقت اشاعت
پچھلی خبر مركزی صفحہ اگلی خبر
تمام خبریں
یہ صفحہ اپنے احباب کو بھیجئیے
محفوظ کیجئے
پرنٹ کیجئے