اگلا صفحہ پچھلا صفحہ

"بجلی کا بحران، عوام پریشان" پر مزید کوریج

صوبائی دارالحکومت سمیت ملک بھر میں لوڈ شیڈنگ کا جاری ‘ لاہور اورفیصل آباد سمیت کئی شہروں میں غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کیخلاف صارفین کے احتجاجی مظاہرے ‘ کئی مقامات پر ٹائر جلا کر ٹریفک کا نظام معطل کر دیا گیا:
لاہور(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین ۔4جنوری۔ 2010ء)ہائیڈرل پیداوار میں کمی کے باعث پیپکو کے شارٹ فال میں مزید اضافہ ہو گیا جسکی وجہ سے صوبائی دارالحکومت سمیت ملک بھر میں لوڈ شیڈنگ کا سلسلہ تاحال جاری ہے ‘ لاہور اورفیصل آباد سمیت کئی شہروں میں غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کیخلاف صارفین نے زبردست احتجاج بھی کیا اورمظاہرین نے ٹائر جلاکر متعدد سڑکیں بلاک کر دی ہیں جسکی وجہ سے کئی مقامات پر مظاہروں کے باعث ٹریفک بھی معطل رہی۔تفصیلات کے مطابق ہائیڈرل پیداوار میں کمی کے بعد پیپکو کا شارٹ فال 3ہزار میگا واٹ تک پہنچ گیا ہے جس کے باعث دیہی علاقوں میں 12سے 14گھنٹے جبکہ شہری علاقوں میں 6سے 8گھنٹے کی لوڈ شیڈنگ کی جارہی ہے جبکہ اسکے ساتھ غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کا سلسلہ بھی جاری ہے ۔بتایا گیا ہے کہ فیصل آباد میں غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کا دورانیہ16 گھنٹے سے تجاوز ہونے کیخلاف شہریوں اور مزدوروں کی طرف سے احتجاج کا سلسلہ تیسرے روزبھی جاری رہا ‘مظاہرین نے سمندری روڈ، ہادی آباد،سرگودھا روڈ پر غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کے خلاف ٹائر جلائے جس کی وجہ سے ٹریفک کا نظام معطل ہو گیا ۔ مظاہرین کا مطالبہ تھا کہ غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ کا سلسلہ فوری طور پر بند کرکے بجلی کی بندش کا باقاعدہ شیڈول جاری کیا جائے اور صنعتی علاقوں میں کم سے کم لوڈشیڈنگ کی جائے تاکہ صنعتی پیداوار متاثر ہونے سے روزانہ کی اجرت پر کام کرنیوالے مزدور بے روزگار ہونے سے بچ سکیں ۔ علاوہ ازیں صوبائی دارالحکومت سمیت دیگر مختلف علاقوں میں صارفین نے بجلی کی گھنٹوں غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کے خلاف واپڈا کے خلاف احتجاجی مظاہرے کئے اور واپڈا انتظامیہ کے خلاف نعرے لگائے ۔

04/01/2010 22:32:28 : وقت اشاعت
پچھلی خبر مركزی صفحہ اگلی خبر
تمام خبریں
یہ صفحہ اپنے احباب کو بھیجئیے
محفوظ کیجئے
پرنٹ کیجئے