اگلا صفحہ پچھلا صفحہ

"بجلی کا بحران، عوام پریشان" پر مزید کوریج

پشاور سمیت صوبے بھر میں بجلی کے غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کے خلا ف احتجاجی مظاہروں کے دوران سات افراد جاں بحق:
پشاور(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔05اگست ۔2009ء) صوبائی دارلحکومت پشاور سمیت صوبے بھر میں بجلی کے غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کے خلا ف احتجاجی جلوسوں اور مظاہروں سے اب تک پولیس فائرنگ سے سات افراد جاں بحق ہو چکے ہیں ۔ پیسکو کی جانب سے پشاور سمیت صوبے بھر میں غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کی جا رہی ہے ۔ پیسکو کے شیڈول کے مطابق چھ سے آٹھ گھنٹے لوڈ شیڈنگ کی جا رہی ہے تاہم غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کا سلسلہ سولہ گھنٹے تک پہنچ چکا ہے ۔ پولیس رپور ٹ کے مطابق بجلی کے غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کے باعث امن وامان کی صورتحال ابتر ہو رہی ہے ۔ مظاہروں ، جلوسوں میں روز بروز اضافہ ہو رہا ہے ۔ رپورٹ کے مطابق صوبے بھر میں اب تک پولیس فائرنگ سے سات افراد جاں بحق ہو چکے ہیں ۔ رپورٹ کے مطابق پولیس کی لاٹھی چارج اور آنسو گیس سے ڈیڑھ سو افراد متاثر ہو ئے ۔ جاں بحق ہونے والوں میں پشاور ، مردان ، بنوں ، چارسدہ اور دیگر اضلاع سے ہے ۔ بجلی کے غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کے خلاف جاری احتجاجی جلوسوں اور مظاہروں کے باعث پولیس حکام نے اسے امن وامان کا مسئلہ قرار دیتے ہو ئے صوبائی حکومت سے رابطہ کیا ہے ۔ اور سفارش کی ہے کہ پیسکو بجلی کے غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کا سلسلہ کم کر دے تاکہ امن وامان کی صورتحال بہتر ہو سکے ۔

06/08/2009 21:10:59 : وقت اشاعت
پچھلی خبر مركزی صفحہ اگلی خبر
تمام خبریں
یہ صفحہ اپنے احباب کو بھیجئیے
محفوظ کیجئے
پرنٹ کیجئے