اگلا صفحہ پچھلا صفحہ

"بجلی کا بحران، عوام پریشان" پر مزید کوریج

بجلی کا نظام درست کرنے میں کئی سال لگے گا، کے ای ایس سی:
کراچی (اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔8جولائی ۔2009ء) کے ای ایس سی کے چیف آپرٹینگ آفیسر جان عباس زیدی نے کہا ہے کہ کراچی کے چھیانوے سال پرانے بجلی کے نظام کو درست کرنے میں کئی سال لگ سکتے ہیں اور نئے جنریشن پلانٹ،گرڈ اسٹیشن اور فیڈرز کی تنصیب تک کراچی کے شہریوں کو لوڈ شیڈنگ برداشت کرنی ہو گی۔ کراچی میں پریس بریفنگ سے خطاب کرتے ہوئے جان عباس زیدی کا کہنا تھا کہ بجلی چوری، لوڈ شیڈنگ اور پاور بریک ڈاﺅن کی وجہ سے ادارہ کو مالی خسارے کا بھی سامنا ہے۔ جان عباس نے کہا کہ سسٹم کو جتنا بھی جدید بنا لیا جائے بجلی چور ہر صور ت میں بجلی چوری کرے گا۔کراچی میں بجلی کے نظام کو اپ گریڈ کرنے سے نہ صرف شہریوں کو بجلی کی فراہمی بہتر ہوگی بلکہ ادارے بھی منافع بخش بن جائے گا۔ جان عباس نے بتایا کہ کورنگی کے علاقے میں ہائی ٹینش لائن گرنے سے گرڈ اسٹیشن سے بجلی کی فراہمی منقطع ہو گئی تھی متاثرہ علاقے کو متبادل ذرائع سے بجلی فراہم کر دی گئی ہے جبکہ تاروں کی تنصیب کا کام جاری ہے۔ انہوں نے بتایا کہ شہر میں شادی اور دیگر خوشی کے موقع پر ہوائی فائرنگ سے بھی تار ٹوٹنے کے واقعات رونما ہوتے ہیں اور ان واقعات کی تحقیقات کرائی جا رہی ہے۔ شہر میں لوڈ شیڈنگ کے حوالے سے جان عباس کا کہنا تھا کہ بن قاسم پاور پلانٹ کا یونٹ نمبر دو اور کورنگی تھرمل پاور کا یونٹ چار بند ہونے سے دو سو میگاواٹ بجلی کی کمی ہے اور شہر مین بجلی کی طلب تئیس سو میگاواٹ اور پیداوار اکیس سو میگاواٹ ہے۔

08/07/2009 18:09:44 : وقت اشاعت
پچھلی خبر مركزی صفحہ اگلی خبر
تمام خبریں
یہ صفحہ اپنے احباب کو بھیجئیے
محفوظ کیجئے
پرنٹ کیجئے