اگلا صفحہ پچھلا صفحہ

"بجلی کا بحران، عوام پریشان" پر مزید کوریج

کراچی کے80فیصد علاقوں میں بجلی فراہمی بحال کر دی،کے ای ایس سی:
کراچی(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔18جون۔2009ء)کراچی میں بجلی کے طویل بریک ڈاوٴن کے بعد شہر کے اسی فیصد علاقوں میں بجلی کی فراہمی بحال کردی گئی ہے ۔ کے ای ایس سی کے ترجمان عائشہ اعرابی کے مطابق بن قاسم پاور پلانٹ کے چھ یونٹ کورنگی تھرمل پاور، سائٹ گیس ٹربائن اور نجی پاور پلانٹ سے بجلی کی فراہمی شروع ہوگئی ہے اور بن قاسم پاور پلانٹ کے چھ یونٹ نو سو میگاواٹ بجلی فراہم کررہے ہیں۔عائشہ اعرابی کا کہنا تھا کہ کے ای ایس سی کے انجینئرز نے بیس گھنٹے کی جدوجہد کے بعد شہر کا سسٹم بحال کیا ہے ۔ شہر میں بجلی کے طویل بریک ڈاوٴن کی وجہ سے گھریلو تجارتی اور صنعتی سرگرمیاں بری طرح متاثر ہوئی ہیں۔کورنگی ایسوسی ایشن کے چیئرمین میاں زاہد حسین کا کہنا ہے کہ بجلی کے طویل بریک ڈاوٴن کی وجہ سے صنعتی عمل متاثر ہونے سے حکومت کو ریونیو کی مد میں ایک ارب روپے سے زائد کا نقصان ہوا ہے جبکہ ایکسپورٹرز کا کام بند ہونے کی وجہ سے دو بلین روپے خسارے کا سامنا کرنا پڑا۔شہر میں جاری بجلی کے بحران کی وجہ سے شہر کے رہائشی علاقوں میں پانی کی سپلائی شدید متاثر ہوئی ہے جبکہ نجی و سرکاری اسپتالوں میں متعدد آپریشنز ملتوی کردیئے گئے ۔دوسری جانب جامعہ کراچی اور اعلیٰ ثانوی تعلیمی بورڈ کے تحت جاری امتحانات میں شریک ہزاروں امیدواروں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔ امتحانات میں شریک امیدواروں نے گورنر سندھ ڈاکٹر عشرت العباد خان سے مطالبہ کیا ہے کہ امتحانی مراکز کو لوڈشیڈنگ سے مستثنیٰ قرار دیا جائے اور طویل ترین غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کا فوری نوٹس لیا جائے ۔

18/06/2009 17:59:56 : وقت اشاعت
پچھلی خبر مركزی صفحہ اگلی خبر
تمام خبریں
یہ صفحہ اپنے احباب کو بھیجئیے
محفوظ کیجئے
پرنٹ کیجئے