اگلا صفحہ پچھلا صفحہ

"بجلی کا بحران، عوام پریشان" پر مزید کوریج

حکومت آزاد کشمیر نے بجٹ میں وادی نیلم کے عوام کو پانچ سال تک بجلی مفت مہیا کرنے کا اعلان کیا ہے‘وزیرجنگلات آزاد کشمیر:
اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔28جون ۔2009ء)وزیر جنگلات آزادکشمیر اورپاکستان پیپلز پارٹی آزادکشمیر کے مرکزی نائب صدر میاں عبدالوحید ایڈ ووکیٹ نے کہا ہے کہ جنگلات کا تحفظ اولین ترجیح ہے وادی نیلم کے جنگلات کو بچانے کیلئے حالیہ بجٹ میں حکومت آزادکشمیر نے وادی نیلم میں پانچ میگا واٹ بجلی کے پاور ہاؤس تعمیر کر کے وادی نیلم کے عوام کو پانچ سال تک بجلی مفت مہیا کرنے کا اعلان کیا ہے جبکہ آزادکشمیر بھر میں جنگلات کے قریب بسنے والے افراد کو جنگلات کی کٹائی روکنے کیلئے انتہائی سستے داموں بجلی مہیا کرنے کا فیصلہ کیا ہے وادی نیلم میں موبائل فون سروس شروع کرنے 26محلق پلوں کی تعمیر کا کام بھی شروع ہو گیا ہے جبکہ نیلم ہسپتال کو ڈسٹرکٹ ہیڈ کواٹر ہسپتال کا درجہ دینے کے ساتھ مذید ڈاکٹرز کی تعیناتی کی جا رہی ہے ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز اسلام آباد میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا انہوں نے کہا کہ میرا حلقہ انتخاب ضلع نیلم ماضی میں ایک سوچی سمجھی سازش کے تحت پسماندہ رکھا گیا حالانکہ وادی نیلم کے قدرتی وسائل سے سالانہ قومی خزانے کو اربوں روپے کی لکڑی معدنیات ،قدرتی وسائل پن بجلی کے شعبے سے حاصل ہوتا ہے لیکن اس کے باوجود وادی نیلم کے ساتھ سوتیلی ماں جیسا سلوک کیا جاتا تھا لیکن ہماری حکومت آتے ہی وادی نیلم میں بلا تاخیر بڑے منصوبوں پر کام شروع کر دیا ہے جن پر تیز رفتاری سے کام جاری ہے انہوں نے کہا کہ شاہراہ نیلم کی تعمیر سے وادی نیلم میں تعمیر و ترقی کے نئے دروازے کھلیں گے ۔انہوں نے کہا کہ وادی نیلم میں سیاحت ،پن بجلی کو فروغ دیکر آزادکشمیر کو خود کفیل بنا ئیں گے اور بیروز گاری ختم ہونے سے عوام کا معیار زندگی بھی بلند ہو گا وادی نیلم کی بلند ترین اور خوبصورت جھیل رتی گلی اور پتلیاں تک سڑک کی تعمیر سے دنیا بھر کے سیاحوں کی توجہ آزادکشمیر کی جانب ہو گی ۔

28/06/2009 17:25:53 : وقت اشاعت
پچھلی خبر مركزی صفحہ اگلی خبر
تمام خبریں
یہ صفحہ اپنے احباب کو بھیجئیے
محفوظ کیجئے
پرنٹ کیجئے