اگلا صفحہ پچھلا صفحہ

"بجلی کا بحران، عوام پریشان" پر مزید کوریج

مردان---15 روز سے بجلی بند ہونے پر یونین کونسل غلہ ڈھیر کے سینکڑوں مشتعل افراد کا مظاہرہ،ڈی پی او مردان کی سربراہی میں پولیس کا مظاہرین پر لاٹھی چارج‘ناظم سمیت دیگر افرادزخمی و گرفتار:
مردان (اُردو پوائنٹ تازہ ترین۔27اپریل 2009 ء)پندرہ دن سے بجلی کی بندش کے خلاف یونین کونسل غلہ ڈھیر کے سینکڑوں مشتعل مظاہرین نے رکن قومی اسمبلی نوابزادہ خواجہ محمد خان ہوتی کی کال پر ناظم کی قیادت میں پشاور اسلام آباد موٹروے کو ہر قسم کی ٹریفک کیلئے بند کر دیا-ڈی پی او مردان اور دیگر افسران کی قیادت میں پولیس کی بھاری نفری نے مظاہرین پر زبردست لاٹھی چارج کیا شیلنگ اورفائرنگ بھی کی گئی جس سے متعدد افراد زخمی جبکہ ناظم سمیت تین افراد گرفتارہوگئے-تفصیلات کے مطابق ومیرہ مردان کی یونین کونسل غلہ ڈھیر چوکئی اور درجن بھر دیگر دیہات کو پندرہ روز سے مین لائن میں فنی خرابی کی وجہ سے بجلی بند ہے جس کے خلاف مشتعل عوام کا احتجاجی سلسلہ جاری ہے اور دو دن قبل رکن قومی اسمبلی نوابزادہ خواجہ محمد خان ہوتی کی قیادت میں ناظم نورگل اور دیگر نے احتجاجی مظاہرہ کیا اور پریس کانفرس میں بجلی بحال نہ ہونے پر رکن قومی اسمبلی نوابزادہ خواجہ محمد خان ہوتی نے ڈیڈ لائن دی تھی اور بروز پیر موٹروے بند کرنے کی دھمکی دی تھی جس پر عمل کرتے ہوئے غلہ ڈھیر کے ناظم نورگل کی قیادت میں گاؤں چوکئی کے قریب علاقے کے لوگوں نے اسلام آباد پشاور موٹروے کو ہر قسم کی ٹریفک کیلئے بند کر دیا لیکن ڈی پی او واقف خان اور دیگر افسران موقع پر پہنچ گئے اور مشتعل مظاہرین پر شیلنگ اور لاٹھی چارج اور ہوائی فائرنگ کی جس سے ناظم نورگل اور گل روز کے علاوہ متعدد افراد زخمی ہو گئے جبکہ پولیس نے ناظم نور گل‘صفدر خان اور ارشاد وغیرہ کو گرفتار کر کے حوالات میں بند کر دیا-

27/04/2009 14:20:43 : وقت اشاعت
پچھلی خبر مركزی صفحہ اگلی خبر
تمام خبریں
یہ صفحہ اپنے احباب کو بھیجئیے
محفوظ کیجئے
پرنٹ کیجئے