اگلا صفحہ پچھلا صفحہ

"بجلی کا بحران، عوام پریشان" پر مزید کوریج

کراچی، امتحانی مراکز پر بجلی غائب، طلبہ شد ید پریشان:
کراچی (اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔20مارچ ۔2009ء) بجلی کے بدترین بحران کے ساتھ میٹرک کے سالانہ امتحانات شروع ہوگئے ہیں۔شہر کے بیشتر امتحانی مراکز پر لوڈشیڈنگ اور پینے کے پانی کی عدم فراہمی کے باعث امتحانات میں شریک طلبہ وطالبات کو مشکلات کا سامنا رہا۔میٹرک کے سالانہ امتحانات کا آغاز میٹر ک جنرل گروپ ریگولر اور پرایﺅیٹ کے اسلامیات کے پرچے سے ہوا۔ بورڈ آفس کی انتظامیہ کی جانب سے امتحانی مراکز کو لوڈ شیڈنگ سے مستشنی رکھنے کی درخواست کے باوجود کے ای ایس سی کے حکام نے صورت حال کا نوٹس نہیں لیاجبکہ بعض امیدواروں نے بتایا کہ لوڈ شیڈنگ کے باعث نہ صرف گھروں پر بلکہ دوران امتحان بھی انھیں مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔ سرکاری اسکولوں میں بنائے گئے امتحانی مراکز میں بوسیدہ ڈیسک بھی امتحانات میں شریک امیدواروں کی کارکردگی کو متاثر کرنے کا سبب بن کر سامنے آئیں ۔میٹرک کے سالانہ امتحانات کے لئے شہر بھر میں 476امتحانی مراکز بنائے گئے ہیں۔جبکہ نویں اور دسویں جماعتوں کے تمام گروپوں کے امتحانات میں اس سال تین لاکھ سے زائد امیدوار شرکت کررہے ہیں۔ میٹرک بورڈ کی انتظامیہ کی جانب سے امتحانی مراکز کے اطراف دفعہ ایک سو چوالیس کے نفاذ کے باوجود بعض امتحانی مرا کز کے باہربیرونی عناصر کی جانب سے نقل کرانے کی شکایات موصول ہوئی ہیں۔

20/03/2009 14:49:13 : وقت اشاعت
پچھلی خبر مركزی صفحہ اگلی خبر
تمام خبریں
یہ صفحہ اپنے احباب کو بھیجئیے
محفوظ کیجئے
پرنٹ کیجئے