بند کریں
شاعری عادل منصوری

دل حرفِ تمنا کے اثر میں نہیں رہتا

-

dil harf e tamana k asaar main nahi rehta


(246) ووٹ وصول ہوئے

: متعلقہ عنوان