بند کریں
شاعری افضال نویدمکاں جو چپ ہے یہاں کوئی رہ گیا ہو گا

(179) ووٹ وصول ہوئے