بند کریں
شاعری احمد فراز

کرتے بھی کیا

-

Kartey bhi kia


(239) ووٹ وصول ہوئے