بند کریں
شاعری احمد فریدیہاں رسم غم کا فروغ درد کا سلسلہ ہی نہیں رہا

(309) ووٹ وصول ہوئے