بند کریں
شاعری احمد راہی

کوئی حسرت بھی نہیں

-

koi hasrat bhi nahi koi tamana bhi nahi


(256) ووٹ وصول ہوئے