بند کریں
شاعری اعتبار ساجدملیں پھر آ کے اسی موڑ پر

(364) ووٹ وصول ہوئے