بند کریں
شاعری عاکف غنی

یوں تو کٹ جائے گا سفر تنہا

-

yun tu katt jaye ga


(258) ووٹ وصول ہوئے