بند کریں
شاعری علی یاسرآب میں ذائقہ شیر نہیں ہو سکتا

(176) ووٹ وصول ہوئے