بند کریں
شاعری انصرحسنجب بھی ملا ہے وہ کسی ڈھب سے نہیں ملا

(265) ووٹ وصول ہوئے