بند کریں
شاعری اسداللہ خان غالب

ایک ایک قطرے کا دینا پڑا حساب

-

AIk aik qatrey ka


(303) ووٹ وصول ہوئے