بند کریں
شاعری اسداللہ خان غالب

کوئی امید بر نہیں آتی

-

Koye umeed baar nehin


(531) ووٹ وصول ہوئے