بند کریں
شاعری اسداللہ خان غالب

تو دوست کسی کا بھی ستمگر نہ ہوا تھا

-

Tu dost kisi ka


(861) ووٹ وصول ہوئے

: متعلقہ عنوان