بند کریں
شاعری اصغرگونڈوی

بسترِ خاک پہ بیٹھا ہوں نہ مستی ہے نہ ہوش

-

bistar e khaak per betha hoon na masti hai na hosh


(222) ووٹ وصول ہوئے