بند کریں
شاعری اصغرگونڈوی

پاسِ ادب میں جوشِ تمنا لیے ہوئے

-

pass e adaab main josh e tamana liye hue

اصغرگونڈوی

asghar gondvi

(345) ووٹ وصول ہوئے