بند کریں
شاعری اشفاق ناصر

ہماری سانس بھی تلوار ہے ہمارے خلاف

-

hamari sans bhi talwar hai hamare khilaf


(124) ووٹ وصول ہوئے

: متعلقہ عنوان