بند کریں
شاعری اشفاق ناصر

رنج جو دیدہٴ نمناک میں دیکھا گیا ہے

-

ranjh ju deda e namnaak main dekha giya hai


(327) ووٹ وصول ہوئے