بند کریں
شاعری آصف اقبالکوئی تیر دل میں اتر گیا کوئی بات لب پہ اٹک گئی

(373) ووٹ وصول ہوئے

: متعلقہ عنوان