بند کریں
شاعری آصف اقبالوہی پر فریب لہجہ وہی داستاں پرانی

(311) ووٹ وصول ہوئے