بند کریں
شاعری آصف شہزاد

طبیعت پریشاں ہے آئے کوئی

-

tabiat pareshaan hai aaye koi


(348) ووٹ وصول ہوئے