بند کریں
شاعری عطا شادچوب صحرا بھی وہاں رشک ثمر کہلائے

(200) ووٹ وصول ہوئے

: متعلقہ عنوان