بند کریں
شاعری ایوب خاوریہ تو سوچا بھی نہیں تھا کہ وہ مر جائے گا

(341) ووٹ وصول ہوئے