بند کریں
شاعری اذلان شاہ

یہ خزانے کا کوئی سانپ بنا ہوتا ہے

-

yeh khazane ka koi sanp bana hota hai


(274) ووٹ وصول ہوئے