بند کریں
شاعری عزم بہزاد کھلتا نہیں کہ ہم میں خزاں دیدہ کون ہے

(47) ووٹ وصول ہوئے

: متعلقہ عنوان