بند کریں
شاعری اعجاز ثاقب

مگر کوئی تو ہو

-

magar koi tu ho


(90) ووٹ وصول ہوئے