بند کریں
شاعری فاخرہ بتولچاند نے بادل اوڑھ لیا

اسے روکتے بھی تو کس لئے

-

Isey roktey bhi to


(187) ووٹ وصول ہوئے