بند کریں
شاعری فاخرہ بتولچاند نے بادل اوڑھ لیا

خوشی بھی اک اداسی ہے

-

Kushi bhi ek udasi


(186) ووٹ وصول ہوئے

: متعلقہ عنوان