بند کریں
شاعری فاطمہ اسد نقویخوف سا زندگی پہ طاری ہے

(201) ووٹ وصول ہوئے