بند کریں
شاعری فراق گورکھپوریجولانگہہ حیات کہیں ختم ہی نہیں

(248) ووٹ وصول ہوئے