بند کریں
شاعری فراق گورکھپوری

لپٹی ہوءی قدموں سے وہ راہگزر بھی

-

Liptey hoye qadmoon sey


(206) ووٹ وصول ہوئے