بند کریں
شاعری فراق گورکھپوری

نہ سمجھنے کی یہ باتیں ہیں نہ سجھانے کی

-

Na samjhney ki


(247) ووٹ وصول ہوئے