بند کریں
شاعری حبیب جالب

کہیں آہ بن کےلب پر ترا نام نہ آءے

-

kahin-aaH-ban-k-lab-per-tera-naam


(340) ووٹ وصول ہوئے