بند کریں
شاعری حفیظ جالندھری

ہم ہی میں تھی نہ کوءی بات،یاد نہ تم آسکے

-

hum hi main thi na koi baat


(423) ووٹ وصول ہوئے