بند کریں
شاعری حفیظ جالندھری

تو ہی بھروساتو ہی سہارا

-

tu hi bharos tu hi sahara


(401) ووٹ وصول ہوئے