بند کریں
شاعری عرفان صدیقیحاصل سیر بے دلاں کون مکاں نہیں نہیں

(364) ووٹ وصول ہوئے